Mistakes in Reiki Hand Positions


ریکی سے علاج کے دوران ہاتھ رکھنے میں غلطیاں

ریکی کی تربیت کے دوران علاج کرنے کے طریقے سکھائے جاتے ہیں۔ پہلے درجے میں نہ صرف ہاتھ رکھنے کا طریقہ بلکہ مختلف مقامات پر ہاتھ رکھنے کی ایک ترتیب بھی بتائی جاتی ہے۔ اگر باقاعدگی سے پریکٹس نہ کی جائے تو وہ ترتیب اکثر اوقات ذہن سے نکل جاتی ہے۔ اگر تربیت نامکمل ہو اور ٹیچر نے مکمل آگاہی نہ دی ہو تو ہاتھ رکھنے کے مقامات کا بھول جانا بہت سے لوگوں کے لئے پریشانی کا باعث بنتا ہے۔ ایسی صورت میں شرمندگی سے بچنے کے لئے لوگ ٹیچر سے بھی نہیں دوبارہ نہیں پوچھتے۔ اس مضمون کا مقصد اسی مسئلے کی وضاحت ہے۔

تربیت کے دوران ہاتھ رکھنے کے لئے بتائے گئے مقامات کی تعداد عموماً چودہ سے اٹھارہ ہوتی ہے۔ ان کی ترتیب کا مقصد صرف ابتدائی رہنمائی ہوتا ہے۔ اگر ترتیب نہ سکھائی جائے اور شروع سے ہی سب کچھ طالبعلم کی صوابدید پر چھوڑ دیا جائے تومبتدی ہونے کے ناطے اس کے لئے خاصی اُلجھن اور گومگو کی صورت پیدا ہو سکتی ہے کہ کہاں ہاتھ رکھے کہاں نہ رکھے، کہاں پہلے رکھے اور کہاں بعد میں۔ اس صورت حال کے ازالے کے لئے ایک مخصوص ترتیب سکھائی جاتی ہے۔ در حقیقت ضروری نہیں ہوتا کہ ہر مقام پر لازمی ہاتھ رکھا جائے۔ اگر کوئی جگہ رہ جائے تو اس کا مطلب یہ نہیں ہوتا کی ٹریٹمنٹ میں غلطی ہو گئی اور نا مکمل رہ گئی اور اب اس کا کوئی فائدہ نہیں ہو گا۔ یاد رہے کہ ایسا نہیں ہوتا۔ ہاتھ رکھنے کے مقامات کی تعداد ضرورت کے مطابق کم یا زیادہ نہ صرف کی جا سکتی ہے بلکہ یقیناً کرنی چاہئے۔ اگر کوئی مقام رہ جائے تو اس میں پریشانی کی کوئی بات نہیں ہوتی۔ ریکی بہرحال پورے جسم میں پھیلتی ہے اور جہاں ضرورت ہو پہنچتی ہے۔ اسی طرح ضرورت کے مطابق ترتیب بھی بدلی جا سکتی ہے۔ لہٰذا اس سلسلے میں پریشان ہونے کی قطعاً کوئی ضرورت نہیں۔ جس طرح آپ کا ذہن رہنمائی کرے اس کے مطابق ٹریٹمنٹ دیں، اپنا کام جاری رکھیں اور مطمئن رہیں کہ آپ نے کوئی غلطی نہیں کی۔

No comments:

Post a Comment

Note: Only a member of this blog may post a comment.

Popular Posts